‎‎’ بھارت سے بجلی کاپلانٹ عمران حکومت کی پالیسی کے مطابق آیا’

وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ آڈیو ثبوت ہے کہ کوئی غیرقانونی کام نہیں ہوا نہ ہی کسی کوکوئی ناجائز فائدہ پہنچایاگیا، ‎ بھارت سے بجلی کاپلانٹ عمران کی حکومت کی پالیسی اور قانون کے مطابق آیا۔

مریم اورنگزیب نے بیان میں کہا کہ عمران صاحب ہاؤسنگ سوسائٹی کے گرڈ سٹیشن کی تنصیب کے بارے میں18 جولائی 2020 کا ہائی کورٹ ملتان بینچ کا فیصلہ پڑھ لیں ۔

انہوں نے کہا کہ ‎فارن فنڈنگ کے عوض پاکستان کی آزادی، خودمختاری اور معیشت کا سودا کرنے والا چیخیں مار رہا ہے ، ‎رومیتہ شیٹی ، اندردوسانج جیسے بھارتیوں سے فارن فنڈنگ لینے والا چیخیں مار رہا ہے ، غصہ اس بات کا ہے کہ شہباز شریف نے کوئی پالیسی بدلی نہ زمین مانگی اور نہ ہی 5 قیراط کے ہیرے مانگے ۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ ‎کوئی غیرقانونی کام نہ ہونے پر عمران خان غصے سے پاگل ہوگئے ہیں ، ‎عمران خان کو غصہ اور تکلیف ہی یہ ہے کہ آڈیو سے بھی کوئی غیرقانونی چیز برآمد نہ ہوسکی ، ‎ غصہ اور تکلیف ہے کہ آڈیو میں بشری بی بی کے پانچ کیرٹ ہیرے کا ذکر نہیں، ‎خیرات کے پیسے اپنی ذات اور سیاست کے لئے استعمال کرتے رنگے ہاتھوں پکڑے کا چیخنا چلانا بنتا ہے۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ ‎ 190 ملین پاﺅنڈ ”بندلفافے“ میں پانچ قیراط کی انگوٹھی دینے والے کو ”عطیہ“ کرنے جیسا کوئی کام نہیں ہوا ، ‎پانچ قیراط ہیرے کے لئے حکومتی پالیسی بدلنے والاآج دوسروں پر بہتان تراشی کررہا ہے ، ‎458 کنال زمین کے لئے حکومتی پالیسی بدلنے والاہمیشہ کی طرح آج بھی جھوٹ بول رہا ہے ، ‎توشہ خانہ کی پالیسی بدل کر کروڑوں روپے کی تین گھڑیوں سے منافع کمانے والاجھوٹ بولنے سے پہلے آئینہ دیکھ لیا کرے ۔

انہوں نے کہا کہ ‎اس آڈیو میں شوکت ترین اور آپ کے صوبائی وزرا کی پاکستان دشمن سازش جیسی کوئی بات نہیں نکلی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں