چین نے 3 سال بعد کورونا سے متعلق سفری پابندیاں ختم کردیں

چیں میں 3 سال بعد کورونا وائرس کی وبا سے متعلق سفری پابندیوں کو ختم کردیا گیا ہے۔

چین کی جانب سے بیرون ملک سے آنے والے چینی مسافروں کیلئے کورونا ٹیسٹ اور قرنطینہ جیسی پابندیوں کو ختم کردیا گیا ہے۔اس سے پہلے چین کی زیرو کووڈ پالیسی کی بیشتر پابندیاں پہلے ہی ختم کر دی گئی تھیں تاہم اب سرحدوں کو بیرون ملک سے آنے والے چینی شہریوں کے لیے کھول دیا گیا۔

نئے قوانین کے تحت اولین پروازیں سنگاپور اور کینیڈا سے چین کے شہروں گوانگزو اور شینزن پہنچیں۔جن میں 387 مسافر سوار تھے، چین میں داخلے کیلئے انہیں کورونا ٹیسٹ اور قرنطینہ جیسے مراحل سے گزرنا نہیں پڑا۔

چین کی سرحدیں تاحال غیرملکی سیاحوں کے لیے بند ہیں،تاہم غیر ملکی افراد کاروباری مقاصد کیلئے وہاں جا سکتے ہیں۔

ان پابندیوں کو ہٹانے کے بعد بیرون ملک جانے والے چینی شہریوں کی تعداد میں اضافے کے امکان کو دیکھتے ہوئے کئی ممالک نے چین سے آنے والے مسافروں ک کیلئے کورونا ٹیسٹ لازمی قرار دیا ہے۔چین نے اس پر ردعمل دیتے ہوئے سفری پابندیوں کو ناقابل قبول قرار دیا ہے۔

خیا رہے کہ چین میں سفری پابندیوں کا اختتام اس وقت کیا گیا ہے جب وہاں نئے قمری سال کا آغاز ہونے والا ہے۔ قمری سال کے آغاز کے موقع پر کروڑوں افراد چین بھر کا سفر کریں گے اور یہ 2020 کے بعد پہلی بار ہوگا جب کسی قسم کی سفری پابندیاں عائد نہیں ہوں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں