واٹس ایپ اب انٹرنیٹ کے بغیر بھی کام کرے گا

واٹس ایپ کی جانب سے ایک نیا فیچر متعارف کروا دیا گیا ہے ، جس کے بعد سے اسے انٹرنیٹ کے بغیر بھی چلایا جا سکے گا ، مذکورہ فیچر صرف ان ہی علاقوں میں کام کرے گا کہ جہاں حکومت یا انتظامیہ کی جانب سے انٹرنیٹ بلاک کیا گیا ہے اور وہاں پر واٹس ایپ پر بھی پابندی ہے ۔

واٹس ایپ نے کہا ہے کہ شام اور ایران جیسے ممالک جہاں پر واٹس ایپ یا انٹرنیٹ پر پابندی ہے وہاں کے شہری بھی ایپ تک رسائی کیلئے پراکسی سرور کا استعمال کر سکیں گے ، پراکسی سپورٹ فیچر تازہ ترین ورژن والے صارفین کے لیے باضابطہ طور پر دستیاب ہے ۔

واٹس ایپ کی بلاگ پوسٹ کے مطابق انٹرنیٹ کی بندش انسانی حقوق کی خلاف ورزی میں شمارہوتا ہے، لوگوں کو ایک دوسرے سے جوڑنے کے لئے ہی واٹس ایپ پراکسی سپورٹ متعارف کروائی جارہی ہے جس کی مدد سے لوگ انٹرنیٹ بند ہونے کے ساتھ ساتھ ایپ پر پابندی کے باوجود ورچوئل پرائیویٹ نیٹ ورک (VPN) کے ذریعے واٹس ایپ کا استعمال کرسکتے ہیں ۔

واٹس ایپ کا کہنا ہے کہ پراکسی سپورٹ کے باوجود صارفین کی کالز اور میسجز اینڈ ٹو اینڈ انکرپٹڈ ہی رہیں گی یعنی کہ انہیں واٹس ایپ اور میٹا سمیت پراکسی سرورز کے ذریعے دیکھا یا سنا نہیں جا سکے گا ۔

پراکسی سپورٹ ہے کیا ؟

ایک پراکسی سرور ویب سروسز اور صارفین کے درمیان ایک ثالث ہے اور ایک ویب فلٹر کے طور پر کام کرتا ہے جو صارفین کو سنسرشپ اور پابندیاں روکنے کی اجازت دیتا ہے ۔پراکسی سپورٹ کا سادہ مطلب یہ ہے کہ جن خطوں یا ممالک میں انٹرنیٹ سروس بند ہے یا واٹس ایپ پر پابندی ہے وہاں کے لوگ مذکورہ فیچر کے تحت آسانی سے واٹس ایپ استعمال کرسکیں گے۔

اس فیچر کے زریعے واٹس ایپ خود سے تو انٹرنیٹ فراہم نہیں کرے گا بلکہ دنیا بھر کے مختلف فلاحی اداروں کے بنائے گئے پراکسی نیٹ ورک سرورز مفت انٹرنیٹ فراہم کریں گے ۔

پراکسی انٹرنیٹ سرور صرف انٹرنیٹ ہی فراہم نہیں کریں گے بلکہ پابندی کے باوجود بھی واٹس ایپ کو وہاں چلانے کے قابل بنائیں گے ۔ دنیا بھر میں کئی انسانی اور انسانی حقوق کی تنظیموں نے بھی مفت پراکسی انٹرنیٹ سرورز قائم کیے ہیں جو کہ دنیا بھر کے ممالک کو مفت انٹرنیٹ اور دیگر خدمات فراہم کر رہے ہیں ۔

مذکورہ پراکسی انٹرنیٹ سروسز مفت ہیں اور وہ انٹرنیٹ کنکشن کے بغیر کام کرتی ہیں لیکن صارفین کو پہلے ایسے سرورز کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔

پراکسی سپورٹ فیچر آن کیسے کیا جائے گا ؟

اس فیچر کو استعمال کرنے کیلئے صارف اپنی واٹس ایپ سیٹنگز میں جائے گا پھر واٹس ایپ سیٹنگ بار پر کلک کر کے اسٹوریج اینڈ ڈیٹا پر کلک کرنے کے بعد بالکل آخر میں پراکسی سیٹنگز کا آپشن موجود ہوگا ۔

صارف کو ’پراکسی سیٹنگ پر کلک کرنا ہوگا، جس کے بعد ایک نئی ونڈو کھلے گی، جہاں پراکسی سیٹنگ کو آن کرنا ہوگا۔ پراکسی سیٹنگ کو آن کرنے کے بعد سسٹم ’پراکسی سرور استعمال کرنے کو کہے گا اور اس کے لیے صارفین کو پہلے پراکسی انٹرنیٹ سرور ڈاؤن لوڈ کرنا ہوگا۔یعنی صارفین کو سب سے پہلے اپنے فون میں ’فری پراکسی انٹرنیٹ سرور ڈاؤن لوڈ کرنا ہوگا، جس کے بعد وہ واٹس ایپ کی سیٹنگز میں جا کر اس پراکسی سرور کو واٹس ایپ سے جوڑ سکتے ہیں۔

اس فیچر کیلئے سب سے مشکل بات یہ ہے کہ صارف کو پہلے سے ہی یہ معلوم ہونا چاہیے کہ فری پراکسی انٹرنیٹ سرور کون کون سے ہیں اور کون سا سرور زیادہ محفوظ ہے ؟ واٹس ایپ اس سلسلے میں صارفین کی رہنمائی نہیں کرے گا کہ کون سا پراکسی سرور محفوظ ہے ، صارفین کو پہلے سے ہی پراکسی سرورز ڈاؤن لوڈ کرنا ہوں گے جو کہ ہنگامی حالات میں کام آئیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں