پی ٹی آئی کے مزید 43 ارکان کے استعفے منظور

پاکستان تحریکِ انصاف (پی ٹی آئی) کے مزید 43 ارکان کے استعفے منظور کر لیے گئے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے چند دن قبل منظوری کے لیے استعفے الیکشن کمیشن کو بھجوائے تھے ۔ پاکستان تحریک انصاف ( پی ٹی آئی ) کے مزید 43 ارکان کے استعفے منظور ہو گئے ہیں ، اسپیکر نے استعفوں کی منظوری کی سمری الیکشن کمیشن کو بھی بھجوا دی ہے۔

ذرائع کے مطابق تحریک انصاف کے 43 ارکان کے استعفوں کی منظوری کی سمری الیکشن کمیشن کو بھی موصول ہو گئی ہے ۔قومی اسمبلی میں پاکستان تحریکِ انصاف کے ٹکٹ پر منتخب ہونے والے اب صرف منحرف ارکان ہی باقی بچے ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز پاکستان تحریک انصاف ( پی ٹی آئی ) کے اراکینِ قومی اسمبلی نے الیکشن کمیشن میں درخواست جمع کروائی تھی ۔

درخواست میں مؤقف اپنایا گیا تھا کہ ہم 45 اراکینِ قومی اسمبلی اپنے استعفے واپس لے رہے ہیں، اسپیکر اور قومی اسمبلی سیکریٹریٹ کو استعفے واپس لینے کا بتا دیا گیا ہے۔

درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ اگر اسپیکر استعفے منظور کرتے ہیں تو ہمیں ڈی نوٹیفائی مت کیا جائے ۔پی ٹی آئی کے اراکینِ قومی اسمبلی نے اس سلسلے میں اسپیکر ہاؤس اور الیکشن کمیشن آف پاکستان کے باہر دھرنا بھی دیا تھا۔

دوسری جانب گذشتہ روز پارلیمنٹ ہاؤس کے دروازے تحریکِ انصاف کے اراکین کے لیے بند کر دیے گئے تھے اور انہیں پارلیمنٹ میں داخل ہونے سے بھی روک دیا گیا تھا۔

کتنے ارکان کے استعفے اب تک منظور ہوئے ہیں ؟

خیال رہے کہ 17 جنوری کو بھی اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے سابق وزیرِ داخلہ شیخ رشید اور پاکستان تحریکِ انصاف کے 34 اراکینِ قومی اسمبلی کے استعفے منظور کیے تھے ۔

اسپیکر قومی اسمبلی نے جولائی 2022ء میں بھی پاکستان تحریک انصاف کے 11 اراکینِ قومی اسمبلی کے استعفے منظور کیے تھے، جن میں سے کراچی سے رکنِ قومی اسمبلی شکور شاد نے بھی عدالت میں درخواست دائر کر کے اپنے استعفے کی درخواست واپس لے لی تھی ۔

پی ٹی آئی کے مزید 35 ارکان کے استعفے اسپیکر قومی اسمبلی نے 20 جنوری کو منظور کیے تھے ۔ اب مزید 43 استعفوں کی منظوری کے بعد مجموعی طور پاکستان تحریکِ انصاف کے 122 اور شیخ رشید کا ایک استعفیٰ ملا کر 123 اراکین کے استعفے منظور ہو چکے ہیں ۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے اب تک پاکستان تحریک انصاف کے 81 ارکان کو ڈی نوٹیفائی کیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں