منکی پاکس کا خطرہ ، بیرون ملک سے آنیوالے مشتبہ مریضوں کی اسکریننگ کا فیصلہ

پاکستان میں منکی پاکس کے دو کیسز سامنے آنے کے بعد ملک میں وائرس کے پھیلاؤ کے خدشے کے پیشِ نظر بیرون ملک سے آنے والے مشتبہ مریضوں کی اسکریننگ کا فیصلہ کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ صحت نے ائیرپورٹس کو ہدایت نامہ جاری کرتے ہوئے ائیرپورٹس پر متعلقہ محکموں کو گائیڈ لائینز پر عملدرآمد کی ہدایت کردی ہے ۔

محکمہ صحت کے ہدایت نامہ میں بتایا گیا ہے کہ مریض کے سفری دستاویزات باقاعدہ لفافہ میں بند کر کے لائے جائیں گے ، وائرس کے خطرے کے پیش نظرائیرپورٹس پر پروٹوکول سروس فوری بند کر دی جائے گی ۔

ہدایت نامہ کے مطابق طیارے میں موجود مشتبہ مریض کی نشاندہی بھی کی جائے گی ، مشتبہ مریض کو روٹین کے ڈپارچر کے بجائے ایمبولینس کے ذریعے نکالا جائے گا ، متاثرہ مریض کی امیگریشن ائیرلائن اسٹاف ہی کروائے گا ۔

ہدایت نامہ کے مطابق محکمہ ہیلتھ کے اہلکار مسافروں کے سامان پر جراثیم کش اسپرے کریں گے اور اہلکار حفاظتی پی پی ای کٹس لازمی استعمال کریں ۔

اس کے علاوہ ہدایات جای کی گئیں ہیں کہ عمرہ سے آنے والے ہر ایک مسافر کو بھی چیک کیا جائے گا ، فرنٹ ڈیسک عملہ ہر فلائٹ کے بعد صابن سے ہاتھ دھوئے اور کاؤنٹرز سینٹائز کرے جب کہ ائیرپورٹ لفٹ اور بھیڑ والی جہگوں پر اسپرے کروایا جائے ۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز پاکستان میں منکی پاکس کے دو کیس سامنے آئے ہیں ۔

وفاقی وزارت صحت کے حکام کے مطابق سعودی عرب سے بے دخل کیے جانے والے شخص اور جہاز میں اس کے ساتھ بیٹھے ہوئے دوسرے مسافر میں منکی پاکس کی تصدیق ہوئی۔

وفاقی وزارت صحت کے سینیئر حکام نے بتایا کہ سعودی عرب سے 17 اپریل کو پاکستان آنے والے شخص میں منکی پاکس کی علامات تھیں جس کے بعد اس شخص کو پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز میں طبی معائنے کی ہدایت کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں