اسٹیٹ لائف انشورنس کی اپیلیں مسترد،16لاکھ ادا کرنیکا حکم

اسٹیٹ لائف انشورنس کی اپیلیں مسترد،16لاکھ ادا کرنیکا حکم
اسلام آباد ( پبلک نیوز) صدر عارف علوی کی اسٹیٹ لائف انشورنس کو پالیسی ہولڈرز کے خاندانوں کو 16 لاکھ روپے ادا کرنے کی ہدایت۔ صدر نے وفاقی محتسب کے فیصلے کے خلاف اسٹیٹ لائف انشورنس کارپوریشن کی 4 الگ الگ اپیلیں مسترد کر دیں۔ وفاقی محتسب نے وفات شدہ لائف انشورنس پالیسی ہولڈرز کے خاندانوں کو انشورنس کی پوری رقم ادا کرنے کا حکم دیا تھا۔ اسٹیٹ لائف نے انشورنس پالیسی لیتے وقت بیماری چھپانے کی بنیاد پر رقم ادا کرنے سے انکار کردیا تھا۔ پالیسی ہولڈرز کے ورثاء نے اسٹیٹ لائف کے اس فیصلے کے خلاف وفاقی محتسب سے رجوع کیا تھا۔ وفاقی محتسب نے ناکافی ثبوتوں کی بنیاد پر بیماری چھپانے کا الزام مسترد کیا۔ وفاقی محتسب کے مطابق بیماری کی موجودگی اور جان بوجھ کر چھپانے کا الزام ثابت کرنا اسٹیٹ لائف کی ذمے داری ہے۔ اسٹیٹ لائف انشورنس پالیسی لینے سے پہلے بیماریوں کی موجودگی سے متعلق ثبوت یا تشخیصی رپورٹ پیش کرنے میں ناکام رہا۔ اسٹیٹ لائف پالیسی ہولڈرز کے خاندانوں کو پوری رقم ادا کرے۔ اسٹیٹ لائف میڈیکل اور نان میڈیکل پالیسی کے اجراء کیلئے صحت سے متعلق دعووں کی تصدیق کے عمل پر نظر ثانی کرے۔ صدر مملکت کا کہنا تھا کہ اسٹیٹ لائف کی جانب سے پیش کردہ تمام دستاویزات بعد از انشورنس بیماریوں سے متعلق ہیں۔ حقائق کی روشنی میں اسٹیٹ لائف انشورنس کارپوریشن بد انتظامی کی مرتکب ہوئی۔ محتسب کے فیصلے کے خلاف اسٹیٹ لائف کی درخواست مسترد کی جاتی ہے، 30 دن میں فیصلے پر عمل درآمد کی رپورٹ پیش کی جائے۔

شازیہ بشیر نےلاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی سے ایم فل کی ڈگری کر رکھی ہے۔ پبلک نیوز کا حصہ بننے سے قبل 42 نیوز اور سٹی42 میں بطور کانٹینٹ رائٹر کام کر چکی ہیں۔