پیپلزپارٹی کی اسمبلیاں تحلیل کرنے کی بجائے مدت پوری ہونے کی تجویز

پیپلزپارٹی کی اسمبلیاں تحلیل کرنے کی بجائے مدت پوری ہونے کی تجویز
اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی نے اسمبلیاں تحلیل کرنے کی بجائے مدت پوری ہونے کی تجویز دے دی ہے۔ پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما نیئر حسین بخاری کا کہنا ہے کہ اسمبلیوں کو تحلیل کرنے کی بجائے انکو مدت پوری کرنے دینی چاہئے، مدت پوری ہونے سے چند روز قبل اسمبلیاں تحلیل کرنے سے اچھا پیغام نہیں جائیگا ،اراکین اسمبلی نے 13 اگست 2018 کو حلف لیا تھا، اس حساب سے عام انتخابات 12 اکتوبر تک ہو جانے چاہئے۔ نیئر حسین بخاری نے کہا کہ تیس دن مزید حاصل کرنے کے لئے اسمبلیاں تحلیل کرنے سے زیادہ فرق نہیں پڑے گا، الیکشن کمیشن سمیت سیاسی جماعتوں کے علم میں ہے کہ حکومت کی مدت کب ختم ہو رہی ہے، آئین اور قانون کے مطابق الیکشن کمیشن مدت پوری ہونے کے 60 روز کے اندر انتخابات کروانے کے لئے تیار ہوتا ہے، اسمبلیاں تحلیل کرنے سے چند روز زیادہ مل جائیں گے جس سے کوئی زیادہ فرق نہیں پڑتا۔ پی پی رہنما کا کہنا تھا کہ نگران حکومت کا فیصلہ وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر ملکر کریں گے، وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر میں کسی نام پر اتفاق نہ ہو سکا تو معاملہ پارلیمانی کمیٹی کو جائیگا، چیئرمین پیپلزپارٹی اور وزیر خارجہ بلال بھٹو زرداری کابینہ کا حصہ ہیں وزیراعظم نگران حکومت کے حوالے سے پیپلز پارٹی قیادت سے بھی مشاورت کریں گے۔
ایڈیٹر

احمد علی کیف نے یونیورسٹی آف لاہور سے ایم فل کی ڈگری حاصل کر رکھی ہے۔ پبلک نیوز کا حصہ بننے سے قبل 24 نیوز اور سٹی 42 کا بطور ویب کانٹینٹ ٹیم لیڈ حصہ رہ چکے ہیں۔