پاکستان رینجرزنےبھارت کی طرف سے اسمگلنگ کی بڑی کارروائی ناکام بنادی

پاکستان رینجرزنےبھارت کی طرف سے اسمگلنگ کی بڑی کارروائی ناکام بنادی
پاکستان رینجرز نے بھارت کی طرف سے اسمگلنگ کی بڑی کارروائی ناکام بنا دی گئی،29 جولائی سے3 اگست تک دراندازی کی کوششوں میں 6 بھارتی اسمگلر گرفتار کرلیے گئے، گرفتار بھارتی شہری منشیات، ہتھیاروں کی اسمگلنگ میں ملوث ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر) کی جانب سے بیان میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان رینجرز نے 29 جولائی سے 3 اگست تک دراندازی کی کوششوں میں 6 بھارتی اسمگلروں کو گرفتار کرلیا ہے۔ آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ گرفتار بھارتی شہری منشیات اور ہتھیاروں کی اسمگلنگ میں ملوث ہیں، اسمگلروں میں فیروزپور کے رہائشی گرمیج سنگھ، شندر سنگھ، جگندر سنگھ اور وشال سنگھ ، جالندھر کا رہائشی مہندر سنگھ اور لدھیانہ سے تعلق رکھنے والا گروندر سنگھ شامل ہیں۔ پاک فوج کے ترجمان کے مطابق گرفتار اسمگلروں کےخلاف پاکستان میں غیر قانونی داخلے اور ریاست مخالف سرگرمیوں پرپاکستانی قوانین کےمطابق کارروائی کی جائےگی۔ آئی ایس پی آر کے مطابق بی ایس ایف کے زیر نگرانی بارڈر سے بلا روک ٹوک نقل و حرکت حیران کن ہے،بھارتی بی ایس ایف کا اسمگلروں کے ساتھ ممکنہ گٹھ جوڑ بعید از قیاس نہیں، توقع رکھتےہیں کہ بی ایس ایف بارڈرپرنگرانی کانظام مؤثراوراسمگلروں کیساتھ گٹھ جوڑختم کرےگی۔ انتخابات قریب آتے ہی مودی سرکار اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے ، سیز فائر خلاف ورزیوں اوردراندازی کوششوں میں اضافہ ہوگیا ہے۔ گذشتہ روزبھارتی فوج نے3سال سےجاری سیزفائرمعاہدےکی خلاف ورزی کی تھی ، نکیال سیکٹر میں بلا اشتعال فائرنگ سے 60 سالہ غیاث کو شہید کر دیا تھا۔ تجریہ نگار کا کہنا ہے کہ ہندوستان ماضی میں بھی پاکستان میں اسمگلنگ اور دہشتگردوں کی پشت پناہی میں ملوث رہا ہے، دراندازی میں اضافہ مودی سرکارکی طرف سے جنگ کاماحول بنانے کی کوشش ہے۔ تجریہ نگار نے مزید کہا کہمودی سرکاری کی طرف سے2024 کےانتخابات پراثراندازہونے کی کوشش ہے، جعلی سرجیکل اسٹرائیک، پلوامہ ڈرامہ اور اڑی حملہ مودی کی طرف سے انتخابی اسٹنٹ تھے۔ دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ انتخابات قریب آئیں گے تومودی سرکارکی طرف سے پاکستان مخالف کارروائیوں میں شدت آئے گی۔

Watch Live Public News

ایڈیٹر

احمد علی کیف نے یونیورسٹی آف لاہور سے ایم فل کی ڈگری حاصل کر رکھی ہے۔ پبلک نیوز کا حصہ بننے سے قبل 24 نیوز اور سٹی 42 کا بطور ویب کانٹینٹ ٹیم لیڈ حصہ رہ چکے ہیں۔