سند ھ ہائیکورٹ  کا پی ٹی اے کو ملک بھر میں ایکس مکمل طور پر بحال کرنے کا حکم

سند ھ ہائیکورٹ  کا پی ٹی اے کو ملک بھر میں ایکس مکمل طور پر بحال کرنے کا حکم

(ویب ڈیسک ) سند ھ ہائیکورٹ نے  پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن  اتھارٹی ( پی ٹی اے)  کو ملک بھر میں ایکس مکمل طور پر بحال کرنے کا حکم دے دیا۔

سوشل میڈیا ایپ ایکس کی ملک بھر میں پانچ روز سے بندش جاری ہے، سینئر صحافی ضرار کھوڑو، عنبر شمسی اور دیگر نے عبدالمعیز جعفری ایڈووکیٹ کے توسط سے عدالت سے رجوع  کیا۔

سندھ ہائیکورٹ نے   پی ٹی اے کو ملک بھر میں ایکس مکمل طور پر بحال کرنے کا حکم دے دیا۔عدالت نے کہاکہ   ایکس سروس بغیر کسی خلل اور بندش کے بحال رکھی جائے۔

عدالت نے پی ٹی اے اور دیگر فریقین سے آئندہ سماعت پر تفصیلی جواب طلب کرلیا ، عدالت نے پی ٹی اے کو بلاجواز انٹرنیٹ، ویب سائٹس، ایکس اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارم بند کرنے سے روک دیا۔

عبدالمعیز جعفری ایڈووکیٹ  نے کہا کہ  وزیر داخلہ نے بیان دیا ہے ایکس بند کرنے کی ہدایت جاری نہیں کی گئی، وزیر اعظم، وزیر داخلہ وزیر آئی ٹی وی پی این لگا کرایکس استعمال کرکے قوم کو بتا رہے ہیں، ایکس بند نہیں ہے۔

چیف جسٹس عقیل احمد عباسی  نے کہا کہ  کون بند کرتا ہے کس نے حکم دیا ہے بند رکھنے کا؟۔وکیل نے کہا کہ   ایکس بند رکھنے، سروس کو سلو رکھنے کا اختیار صرف پی ٹی اے کے پاس ہے،   پی ٹی اے سے پوچھا جائے کس نے ایکس بند رکھنے کی ہدایت جاری کیں؟ صحافیوں اور جن کی روزی روٹی ایکس سے وابستہ ہے انہیں شدید مشکلات ہیں۔

 عبدالمعیز جعفری ایڈووکیٹ  ن کہا کہ ذرائع ابلاغ اور ریسرچ سے وابستہ لاکھوں افراد کو ایکس کی بندش سے مشکلات کا سامنا ہے،  غزہ، فلسطین کو امداد فراہم کرنے والوں اور معلومات تک رسائی کے لیے مشکلات کا سامنا ہے۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ  کتنے دن سے ایکس سروس بند ہے؟  ،  ہم نے پہلے بھی ایک درخواست میں انٹرنیٹ سروس کھولنے کا حکم دیا ہے۔

عبد المعیز جعفری ایڈووکیٹ نے کہا کہ یہ درخواست اس سے کیس سے مختلف ہے، جس دن کمشنر راولپنڈی نے بیان دیا تھا اس دن سے ایکس بند ہے،  کمشنر راولپنڈی کے اعتراف کے بعد لوگوں تنقید کررہے تھے۔