برطانیہ میں کام کرنیوالے پاکستانیوں کی ترسیلات زر اضافہ

برطانیہ میں کام کرنیوالے پاکستانیوں کی ترسیلات زر اضافہ
اسلام آباد: ( پبلک نیوز) برطانیہ میں کام کرنے والے پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں جاری مالی سال کے پہلے 7 ماہ میں گذشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 13 اعشاریہ دو فیصد کی نمو ریکارڈ کی گئی ہے۔ سٹیٹ بینک کی جانب سے اس حوالہ سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق جولائی سے لے کر جنوری 2021 تک کی مدت میں برطانیہ میں کام کرنے والے پاکستانیوں نے 2 اعشاریہ 467 ارب ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیا۔ جو گذشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 13 اعشاریہ 2 فیصد زیادہ ہے۔ گذشتہ مالی سال کی اسی مدت میں برطانیہ میں کام کرنے والے پاکستانیوں نے 2 اعشاریہ 178 ارب ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیا تھا۔ جنوری 2022 میں برطانیہ سے ترسیلات زر کا حجم 320 اعشاریہ ایک ملین ڈالر ریکارڈ کیا گیا جو گذشتہ سال جنوری کے مقابلہ میں 6 اعشاریہ 16 فیصد زیادہ ہے۔ گذشتہ سال جنوری میں برطانیہ سے ترسیلات زر کا حجم 301 اعشاریہ 5 ملین ڈالر ریکارڈ کیا گیا تھا۔ واضح رہے کہ حکومت کی جانب سے قانونی اور بینکنگ ذرائع سے ترسیلات زر کی حوصلہ افزائی کیلئے اقدامات کے نتیجہ میں جاری مالی سال کے پہلے 7 ماہ میں سمندر پار پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں گذشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 9 اعشاریہ ایک فیصد کی نمو ریکارڈ کی گئی ہے۔ مالی سال 2021 میں سمندر پار پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں 24 فیصد کی نمو ریکارڈ کی گئی تھی۔