دنیا کا سب سے زیادہ تنخواہ لینے والا سی ای او

tesla alon musk
کیپشن: tesla alon musk
سورس: google

ویب ڈیسک :دنیا کا سب سے زیادہ تنخواہ والا سی ای او، کار ساز کمپنی   ٹیسلا  کے سی ای او ایلون مسک نے 56 ارب ڈالر تنخواہ مانگ لی، مطالبہ نہ مانا تو کمپنی چھوڑ  دینگے۔

رپورٹ کے مطابق ٹیسلا کے شئیرہولڈر 13 جون کو ایلون  مسک کے معاوضے کے پیکیج کا فیصلہ کریں گے،   پیکج کی مالیت 56 بلین ڈالر تک ہے۔ 

یہ  دوسری دفعہ ہے جبکہ ٹیسلا کے شئیر ہولڈرز سی ای او کی تنخواہ پر ووٹ دیں گے،  اس سے قبل امریکی ریاست  ڈیلاویئر کے جج نے پہلی  رائے شماری کو اس بنیاد پر منسوخ کر دیا تھا کہ منظوری کے عمل میں "گہری خامیاں" تھیں۔

  ٹیسلا بورڈ کے صدر Denholm کی طرف سے شئیر ہولڈرز کو تحریر کردہ خط میں کہا گیا ہے ، "ایلون ایک عام ایگزیکٹو نہیں ہے، اور Tesla ایک عام کمپنی نہیں ہے،" ۔

’’ ایلون جیسے کسی کی حوصلہ افزائی کے لیے کچھ مختلف کی ضرورت ہوتی ہے۔"   مسک مناسب حوصلہ افزائی کے بغیر "دوسری جگہوں" پر جا سکتا ہے۔ 

ڈین ہولم کا کہنا ہے کہ "جس چیز کو ہم نے 2018 میں  جانا وہ یہ  ہے کہ  اسے خیالات کی کمی کا سامنا نہیں ہے اور دوسری جگہوں پر رہتے ہوئے بھیہ دنیا میں ناقابل یقین تبدیلی لا سکتا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ وہ خیالات، وہ توانائی اور وہ وقت Tesla میں، آپ کے، ہمارے مالکان کے فائدے کے لیے مختص کرے۔ لیکن اس کے لیے باہمی احترام کی ضرورت ہے۔‘‘

 یادرہے میڈیا رپورٹس کے مطابق   ٹیسلا کے تقریباً 25 فیصد شئیر ہولڈرز پہلے ہی ووٹ دے چکے ہیں۔ ان میں سے 80 فیصد سے زیادہ مسک کے پیکج کے حق میں تھے۔

ایلون مسک مصنوعی ذہانت اور خود سے چلنے والی کاریں تیار کرنے کے اپنے اہداف کو حاصل کرنے کے لیے، 25 فیصد حصص کی شکل میں، Tesla پر مزید کنٹرول حاصل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔ (اس وقت ٹویٹر حاصل کرنے کے لیے اربوں ڈالر کے حصص فروخت کرنے کے بعد کمپنی کا تقریباً 13 فیصد حصہ ان کے پاس ہے۔) 

X پر،   ایلون مسک  نے دھمکی دی ہے کہ اگر ان کے مطالبات پورے نہ ہوئے تو وہ Tesla کے AI کام کو الگ کمپنی میں تبدیل کر دے گا۔

Watch Live Public News