افغانستان میں داعش جیسے گروپ پنپ سکتے ہیں: فواد

افغانستان میں داعش جیسے گروپ پنپ سکتے ہیں: فواد
اسلام آباد ( پبلک نیوز) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چودھری فواد حسین نے کہا ہے کہ افغانستان متعدد نسلی گروہوں پر مشتمل ملک ہے۔ طالبان کے بیانات سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ جامع حکومت بنانے کے خواہاں ہیں جو حوصلہ افزا بات ہے۔ غیر ملکی نشریاتی ادارہ گلوبل بزنس کو انٹرویو دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ہم طالبان کو یہی مشورہ دیں گے افغانستان میں حکومت میں تمام نسلی گروہوں کی نمائندگی ہونی چاہئے۔ افغانستان میں جامع حکومت ہونی چاہئے اور مستحکم حکومت کے قیام کا یہی ایک راستہ ہے۔ وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ طالبان کے بیانات سے ظاہر ہوتا ہے وہ جامع حکومت بنانے کے خواہاں ہیں جو حوصلہ افزا بات ہے۔ پاکستان اس وقت 35 لاکھ افغان مہاجرین کی میزبانی کر رہا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ صورتحال میں افغانیوں نے پاکستان کی طرف ہجرت نہیں کی۔ سوائے غیر ملکیوں کے جو انخلا کر رہے ہیں۔ پاکستان نے 4 ہزار افراد کی افغانستان سے انخلا میں مدد کی۔ ہماری سرحدوں پر کوئی دباؤ نہیں ہے۔ فواد چودھری نے کہا کہ اس وقت افغانستان کی صورتحال انتہائی خطرناک ہے۔ اس وقت افغانستان میں جو خلا پیدا ہوا ہے اس سے داعش اور دولت اسلامیہ جیسے دہشت گرد گروپ پنپ سکتے ہیں۔ یہ صرف افغانستان کے لیے نہیں بلکہ پوری دنیا کے لیے خطرناک ہو گا۔ وفاقی وزیر کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان سمجھتا ہے دنیا کو اس وقت افغانستان میں نئے حکمرانوں سے بات چیت کرنے کی ضرورت ہے۔

Watch Live Public News

شازیہ بشیر نےلاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی سے ایم فل کی ڈگری کر رکھی ہے۔ پبلک نیوز کا حصہ بننے سے قبل 42 نیوز اور سٹی42 میں بطور کانٹینٹ رائٹر کام کر چکی ہیں۔