آدھا ہیلی کاپٹر ، آدھا طیارہ، ’’ ریسر ’’ میدان میں آگیا

racer
کیپشن: racer
سورس: google

ویب ڈیسک :مشہور جہاز ساز کمپنی ایئربس ہیلی کاپٹرز نے تجرباتی بنیادوں پر ایک ایسے جہاز کی رونمائی کی ہے جو طیارے اور ہیلی کاپٹر دونوں کی خصوصیات کا حامل ہے۔
 رپورٹ کے مطابق  یہ مستقبل کے روٹر کرافٹس کی دوڑ کا ایک حصہ ہے۔
 ’ریسر‘ ہوائی جہاز کا ایک ایسا ماڈل ہے جس میں روایتی اوور ہیرڈ روٹر بلیڈ اور آگے کی جانب دو پروپیلرز نصب کیے گئے ہیں تاکہ اس کے توازن اور رفتار دونوں کو یکجا کیا جا سکے۔
اس ہوائی جہاز کو بنانے کا مقصد ریسکیو یا تلاش جیسے اہم مِشنوں کے لیے اس کے ذریعے کم وقت میں ردعمل کو ممکن بنانا ہے۔
ایئربس ہیلی کاپٹرز کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) برونو ایون نے میڈیا کو بتایا کہ ’بعض مشن ایسے ہوتے ہیں جہاں موقعے یا مخصوص جگہ تک جلد سے جلد پہنچنا ضروری ہوتا ہے۔ ہم اکثر ’گولڈن آور‘ کے بارے میں بات کرتے ہیں، جب لوگوں کو فوری طبی امداد کی ضرورت ہوتی ہے۔‘

ایئربس ہیلی کاپٹر نے مارسیل سے باہر اپنے ماریگنین بیس پر 150 صنعتی عہدے داروں، سیاست رہنماؤں اور یورپی یونین کے نمائندوں کے سامنے اس منفرد ہوائی جہاز کی رونمائی کی۔
اس پروجیکٹ کو ایئربس ہیلی کاپٹر کے ’کلین سکائی ٹو‘انیشنیوٹو کا تعاون حاصل ہے۔
اس جہاز کی رونمائی اٹلی کی کمپنی لیونارڈو اور امریکی مینوفیکچرر بیل کے ٹِلٹ روٹر ٹیکنالوجی کو ترقی دینے کے لیے تعاون پر اتفاق کے بعد ممکن ہوئی۔