9مئی کو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی خاتون کی تصویر جعلی نکلی

9مئی کو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی خاتون کی تصویر جعلی نکلی
لاہور: 9 مئی کو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی خاتون کی تصویر جعلی نکلی ۔ غیر ملکی چینل نے تصویر کی حقیقت سے آگاہ کر دیا ۔ سابق وزیر اعظم و چیئرمین پاکستان تحریک انصاف ( پی ٹی آئی) عمران خان کی گرفتاری کے بعد سوشل میڈیا پر ایک تصویر بہت زیادہ وائرل ہوئی جسے خود عمران خان کی جانب سے بھی اپنے اکاؤنٹ سے شیئر کردہ ویڈیو میں دکھایا گیا ہے۔ اس ویڈیو میں خواتین کو صنف آہن کے طور پر دکھایا گیا ہے کہ جو حقیقی جدوجہد میں سیسہ پلائی ہوئی دیوار کی طرح ڈٹ کر کھڑی ہو جاتی ہیں۔ عمران خان کی جانب سے شیئر کردہ ویڈیو جس میں اس تصویر کو بھی دکھایا گیا ہے اسے صرف 2 گھنٹے میں ہی ساڑھے 3 سو ہزار سے زائد افراد دیکھ چکے تھے جبکہ 19 ہزار سے زائد افراد نے شیئر کیا۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر لکھا کہ حقیقی آزادی کے لیے جس انداز میں پاکستانی خواتین کھڑی ہوئی ہیں انہیں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا اور یہ ہماری تاریخ کا حصہ بنے گی۔ اس تصویر میں دکھانے کی کوشش کی گئی کہ پولیس کے سامنے کس طرح خواتین سیسہ پلائی ہوئی دیوار بن کر کھڑی ہو گئیں جبکہ شیئر کردہ اس تصویر میں جس خاتون کو دکھایا گیا اس کے ہاتھ میں پتھر بھی موجود ہے اور اسے ایک بہادر خاتون کے طور پر پیش کیا گیا۔ فرانس کا مشہور ٹی وی چینل اس تصویر کی حقیقت کو سامنے لے آیا۔ جس نے اس تصویر کی حقیقت آشکار کرتے ہوئے بتایا کہ اس تصویر کی کوئی حقیقت نہیں بلکہ یہ تصویر آرٹیفیشل انٹیلی جنس کے ذریعے سے تخلیق کی گئی ہے اور اس تصویر میں کسی کیمرہ مین کا کوئی کمال نہیں ہے۔ غیر ملکی ٹی وی چینل کی صحافی نے بتایا کہ اس تصویر کو پی ٹی آئی کے اکاؤنٹس سے جاری کیا گیا جو دیکھتے ہی دیکھتے وائرل ہو گئی اور مختصر وقت میں 250 ہزار سے زیادہ افراد کی جانب سے اسے دیکھا گیا۔
ایڈیٹر

احمد علی کیف نے یونیورسٹی آف لاہور سے ایم فل کی ڈگری حاصل کر رکھی ہے۔ پبلک نیوز کا حصہ بننے سے قبل 24 نیوز اور سٹی 42 کا بطور ویب کانٹینٹ ٹیم لیڈ حصہ رہ چکے ہیں۔