کروڑ پتی افراد کی تعداد میں ریکارڈ اضافہ

millioners of world increased
کیپشن: millioners of world increased
سورس: google

ویب ڈیسک :ورلڈ ویلتھ کی تازہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ برس بازار حصص میں آنے والی تیزی نے دنیا کے امیر ترین افراد کی دولت میں مزید اضافہ کیا اور اس کی وجہ سے ڈالر کے کروڑ پتی افراد کے کلب میں مزید امیروں کا اضافہ ہوا ہے۔

کنسلٹنگ فرم 'کیپ جیمنی' کی ایک تحقیق کے مطابق، دنیا بھر میں کم از کم ایک ملین ڈالر کے قابل سرمایہ کاری کے اثاثوں والے لوگوں کی تعداد گزشتہ سال 5.1 فیصد بڑھ کر 22.8 ملین تک پہنچ گئی۔

سن 1997 میں پہلی بار جب اس طرح کی سالانہ تحقیق کا آغاز ہوا تھا، اس کے بعد سے یہ اب تک کی بلند ترین سطح ہے۔ اس کے مطابق امیر ترین افراد کی کل دولت 4.7 فیصد سے بڑھ کر ریکارڈ 86.8 ٹریلین ڈالر تک پہنچ گئی ہے۔

اس کی ایک وجہ یہ بھی بتائی جا رہی ہے کہ اسٹاک مارکیٹوں میں آنے والی تیزی کے سبب ان کی دولت میں بھاری اضافہ ہوا۔ گزشتہ برس نیویارک کے بازار حصص نسدق میں 43 فیصد کا اچھال دیکھا گیا، جبکہ اسی طرح ایس اینڈ پی 500 میں 24 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

 پیرس کے بازار حصص سی اے سی 40 میں 16 فیصد کا اضافہ اور فرینکفرٹ ڈی اے ایکس مارکیٹ میں 20 فیصد اضافہ ہوا۔

اوسط سے بھی کم اقتصادی ترقی کے باوجود جرمنی میں بھی ریکارڈ قائم ہوئے ہیں، جہاں امیر ترین افراد کی دولت 2.2 فیصد کے اضافے کے ساتھ  6.28 ٹریلین ڈالر تک پہنچ گئی جبکہ ڈالر کے کروڑ پتیوں کا کلب 34,000 (2.1 فیصد) سے بڑھ کر 1.65 ملین اراکین تک پہنچ گیا۔

مریکہ اب بھی 7.431 ملین کروڑ پتیوں کے ساتھ سرفہرست ہے۔ جاپان بھی 3.777 ملین کروڑ پتیوں کے ساتھ دوسرے نمبر ہے جبکہ چین صرف 1.5 ملین کروڑ پتیوں کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہے۔

مضبوط معیشت کی وجہ سے سب سے مضبوط ترقی شمالی امریکہ میں ریکارڈ کی گئی۔ مہنگائی میں کمی اور تیزی سے بڑھتی ہوئی اسٹاک مارکیٹوں کی بدولت، شمالی امریکہ کے امیر ترین افراد کی دولت 7.2 فیصد کے اضافے سے 26.1 ٹریلین ڈالر تک پہنچ گئی ہے جبکہ کروڑ پتیوں کی تعداد 7.1 فیصد بڑھ کر 7.431 ملین ہو گئی۔

Watch Live Public News