حالات عمران خان سے مذاکرات کے بعد ہی درست ہوں گے، پرویز الٰہی

 حالات عمران خان سے مذاکرات کے بعد ہی درست ہوں گے، پرویز الٰہی
کیپشن: حالات عمران خان سے مذاکرات کے بعد ہی درست ہوں گے، پرویز الٰہی

ویب ڈیسک: پرویزالہٰی نے کہا ہے کہ جنرل الیکشن اور پھر ضمنی الیکشن میں عوام نے ن لیگ کو مسترد کیا، فارم 47 والی حکومت عوام کو کسی صورت قبول نہیں،ہر مسئلہ کا حل مذاکرات کے ذریعے نکالا جا سکتا ہے لگتا ہے ن لیگ مذاکرات کیلئے سنجیدہ نہیں۔ ن لیگ کے اندر اس وقت دو بیانیے چل رہے ہیں ایک مذاکرات کے حق میں ہے اور دوسراحکمران طبقہ مذاکرات سے فرار چاہتا ہے،عمران خان نے پاکستان کی سلامتی اور ترقی کیلئے مذاکرات کی حامی بھری ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی صدر چودھری پرویزالٰہی نے احتساب عدالت میں پیشی پر صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو  کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے سیاسی و معاشی حالات عمران خان سے مذاکرات کرنے کے بعد ہی بہتر ہو سکتے ہیں،تمام سیاسی جماعتیں اپنا اپنا مثبت رول ادا کریں تب ہی استحکام پیدا ہو گا،جنرل الیکشن اور پھر ضمنی الیکشن میں عوام نے ن لیگ کو مسترد کیا، فارم 47 والی حکومت عوام کو کسی صورت قبول نہیں۔

 چودھری پرویزالٰہی نے کہا کہ بانی پی ٹی آئی  کی رہائی کا خوف جعلی حکمرانوں کو چین سے نہیں بیٹھنے دے رہا،نااہل حکمران کب تک عمران خان اور تحریک انصاف کے رہنماؤں کو جیل میں بند رکھیں گے، انشاء اللہ بہت جلد سب عوام میں ہوں گے،ہر مسئلہ کا حل مذاکرات کے ذریعے نکالا جا سکتا ہے لگتا ہے ن لیگ مذاکرات کیلئے سنجیدہ نہیں۔

چودھری پرویزالٰہی  نے مزید کہا کہ ن لیگ کے اندر اس وقت دو بیانیے چل رہے ہیں ایک مذاکرات کے حق میں ہے اور دوسراحکمران طبقہ مذاکرات سے فرار چاہتا ہے،عمران خان نے پاکستان کی سلامتی اور ترقی کیلئے مذاکرات کی حامی بھری ہے۔