عارضہ قلب میں مبتلا مریض یہ مشروب کبھی استعمال نہ کریں

عارضہ قلب میں مبتلا مریض یہ مشروب کبھی استعمال نہ کریں
سینٹرز فار ڈیزیز کنٹرول (سی ڈی سی) کے مطابق دل کی بیماری مردوں اور عورتوں کی موت کی سب سے بڑی وجہ ہے۔ آپ جو کھاتے ہیں وہ یقینی طور پر آپ کی صحت میں ایک کردار ادا کرتا ہے۔ صحیح غذا کھانے سے آپ کے خطرے کو کم کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔ اس کے باوجود زیادہ تر لوگ یہ بھول جاتے ہیں کہ آپ جو مشروبات پیتے ہیں وہ آپ کے دل کی بیماری کے خطرے کو بڑھانے یا کم کرنے میں بھی کردار ادا کرتے ہیں۔ زیادہ کیلوری والے جوس اسموتھیز اور شیک یقیناً صحت مند غذا کا حصہ ہو سکتے ہیں، لیکن بہت زیادہ کیلوریز والے اجزا شامل کرنے سے یہ بظاہر صحت بخش مشروبات کیلوریز کے "بم" بن سکتے ہیں۔دل کی بیماری کا ایک خطرہ زیادہ وزن یا موٹاپا ہے، لہذا 600 یا 800 کیلوریز والی اسموتھیز لینا یقینی طور پر آپ کے وزن میں اضافے کا خطرہ بڑھا سکتے ہیں۔کم کیلوری والے اجزاء جیسے پالک، پھل، اور کم چکنائی یا چکنائی سے پاک دودھ شامل کریں، اور اگر آپ زیادہ چکنائی والے اجزاء جیسے نٹ بٹر یا ایوکاڈو کا انتخاب کرتے ہیں تو کم مقدار میں استعمال کریں۔ ناریل کا پانی اور اگر آپ ناریل پانی پینا پسند کرتے ہیں تو اس سے آپ کے دل کی بیماری کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔ ناریل ایک سیر شدہ چکنائی ہے جو خراب LDL کولیسٹرول کی سطح کو بڑھاتی ہے۔ اس کے بجائے بادام، جئی اور چاول کا انتخاب کریں جن میں سیر شدہ چکنائی زیادہ نہ ہو۔ ڈبہ بند سبزیوں کے مشروبات اس کے علاوہ بہت سے ڈبہ بند سبزیوں کے مشروبات جیسے ٹماٹر کا رس سوڈیم کا مناسب حصہ فراہم کرتے ہیں۔ سینٹرز فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریوینشن (سی ڈی سی) کے مطابق بہت زیادہ سوڈیم (نمک) کھانے سے بلڈ پریشر بڑھ سکتا ہے اور دل کی بیماری کا خطرہ بڑھ سکتا ہے۔اس کے بجائے 100% کم سوڈیم والی سبزیوں کے جوس کا انتخاب کریں جو آپ کی روزانہ سبزیوں کی مقدار میں شمار ہوتے ہیں اور اس پر توجہ دیں کہ آپ کتنا استعمال کرتے ہیں۔
ایڈیٹر

احمد علی کیف نے یونیورسٹی آف لاہور سے ایم فل کی ڈگری حاصل کر رکھی ہے۔ پبلک نیوز کا حصہ بننے سے قبل 24 نیوز اور سٹی 42 کا بطور ویب کانٹینٹ ٹیم لیڈ حصہ رہ چکے ہیں۔