آزاد کشمیر پولیس کے شہید سب انسپکٹر عدنان قریشی کے اہل خانہ کا اظہارخیال

کیپشن: آزاد کشمیر پولیس کے شہید سب انسپکٹر عدنان قریشی کے اہل خانہ کا اظہارخیال

ویب ڈیسک : آزاد جموں وکشمیر میں احتجاج کے دوران سیکیورٹی کے فرائض سرانجام دیتے ہوئے شہید ہونے والے سب انسپکٹر عدنان قریشی کے والدین نے کہا ہے کہ ان کے بیٹے کی شہادت پر اہل خانہ کا سر فخر سے بلند ہوگیا ہے، بیٹے نے شرپسندوں کے عزائم خاک میں ملا دیے ہیں۔

آزاد جموں و کشمیر میں حالیہ پرتشدد مظاہروں میں اپنے فرائض کی ادائیگی کے دوران شہادت پانے والے سب انسپکٹر عدنان شہید نے شرپسندوں کے حملوں میں امن کی خاطر جامِ شہادت نوش کیا، ان کی شہادت پر ان کے والدین نے وطن عزیز کی بقا کی خاطر ہرقسم کی قربانی دینے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔

  سب انسپکٹر عدنان قریشی کی شہادت پر اُن کے والد نے کہا ہے ’مجھے باپ ہونے کے ناتے بہت دکھ ہے مگر مجھے فخر ہے کہ میرے بیٹے نے جام شہادت نوش کیا، میں نے اپنے بیٹے کو ملک و قوم کی خدمت کے لیے وقف کر دیا تھا۔‘

عدنان قریشی کے والد نے کہا کہ ان کے بیٹے عدنان قریشی کی طرح ہزاروں جوان ملک دشمنوں کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہیں، وہ موت سے ڈرنے والے نہیں، ان کا ایمان ہے کہ موت تو آنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ان کے بیٹے نے شرپسندوں کے عزائم خاک میں ملا دیے ہیں، اللہ کے فضل سے سینکڑوں عدنان وطنِ عزیز کی حفاظت کے لیے تیار ہیں۔

اس افسوسناک واقعے پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے ایس ایس پی میرپور کامران علی نے کہا ہے کہ شر پسندوں نے آزاد جموں و کشمیر کا امن تباہ کرنے کی کوشش کی، ہمارے بہت قیمتی آفیسر نے جام شہادت نوش کیا ہے، کسی صورت بھی ملوث عناصر کو نہیں چھوڑا جائے گا۔

کامران علی نے کہا ’شر پسندوں نے روڈ بلاک کر رکھے تھے جس طرح ہمارے جوانوں نے زخمیوں کو وہاں سے نکالا اس پر میں ان کو سلیوٹ پیش کرتا ہوں، فائرنگ اور پتھراؤ کے دوران عدنان شہید کو وہاں سے نکالا گیا، ایمبولینس تک کا راستہ روکا گیا، یہ کیسا پر امن احتجاج تھا۔‘

ایس ایچ او تھوتھل وجاہت کاظمی کا کہنا ہے کہ سب انسپکٹرعدنان قریشی شہید کی قربانی ہماری آنے والی نسلوں کے لیے مشعل راہ ہے، عدنان شہید کو جب گولی لگی تو ان کا خون تیزی سے بہہ رہا تھا اور ان کے چہرے پرتب بھی مسکراہٹ تھی، عدنان شہید کی زبان پر اللہ اکبر اور کلمہ طیبہ کا ورد جاری تھا۔

وجاہت کاظمی کا کہنا ہے کہ شر پسند عناصر کا مقصد احتجاج نہیں بلکہ آزاد جموں و کشمیر کا امن تباہ کرنا تھا، احتجاج کی آڑ میں امن تباہ کرنے والے یہ شر پسند عناصر کسی رعایت کے مستحق نہیں۔

انہوں نے کہا کہ پولیس عوام کی محافظ ہے لیکن ریاست کے امن کو خراب کرنے اور انارکی پھیلانے والوں کے خلاف کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی۔